}; document.write(''); تعلق جذبات سے رکھیں نہ کہ احسانات سے - URDU NEWS
آرٹیکل

تعلق جذبات سے رکھیں نہ کہ احسانات سے

Written by Admin

دھڑکن جذبات سے چلتی ہے نہ کہ احسانات سے، اس لیے جب تک آپ کا کسی سے تعلق ہے، اسے جذبات سے رکھیں نہ کہ احسانات سے۔ انسان کی

یادداشت کتنی ہی کمزور کیوں نہ ہو لیکن وہ اپنے ساتھ ہونے والے اذیت کے لمحات کو نہیں بھول سکتا۔ جو خوشیاں مجھے ملتی ہیں وہ تمہیں نہیں ملتی لیکن

جو دکھ مجھے ملتے ہیں وہ تمہیں بھی نہیں ملتے اگر آزمائشوں کے سوا کچھ نہیں تو انتہائی مہتواکانکشی بھی ہار جائے گی۔

جب کوئی دل کے دروازے پر دستک دیتا ہے تو دروازہ فوراً کھل جاتا ہے۔ کچھ لوگوں کی عادتیں بچوں جیسی ہوتی ہیں۔ وہ دستک دینے کے بعد بھاگ جاتے ہیں۔ وہ یہ کہ لوگ وقت کے ساتھ غصے میں آجاتے ہیں، بعض اوقات انسان کسی انجانی کیفیت کا شکار ہوجاتا ہے!

اسے سمجھ نہیں آرہی تھی کہ وہ کس بات پر ناخوش ہے۔ شوہر اپنی بیوی سے، اس کی زندگی سے جڑے لوگوں سے، اس کے حالات سے یا خود سے کتنا ہی ناراض ہو لیکن رات کی تنہائی میں بیوی کا بوسہ اس کا سارا غصہ دور کر دیتا ہے۔

Comments are closed.

About the author

Admin

Leave a Comment