آرٹیکل

پیاز کے پانی میں یہ ملا کر لگاؤ فالتو بال ہمیشہ کے لیے ختم

Written by Admin

چہرے کے فالتو بال جس کی وجہ سے لڑکیاں بے حد پریشان ہوتی ہیں بعض لڑکیاں تو بہت سی کر یمیں بہت سے ٹوٹکے استعمال کر تی ہیں لیکن وقتی تو فائدہ ہو جا تا ہے لیکن دس پندرہ دن کے بعد دوبارہ بال آنا شروع ہو جا تے ہیں اس طرح پیسوں کا بھی بہت زیادہ ضائع ہو جاتے ہیں

تو آج جو نسخہ میں آپ کے ساتھ شئیر کروں گی وہ میرے ساتھ ایک دوست نے شئیر کیا تھا تو پہلے میں نے خود آزما یا تو میں حیران ہوں کہ اتنا اچھا رزلٹ تو اس لیے میں نے سوچا کہ اس نسخے کو شئیر کر تی ہوں بہت ہی سادہ اور آسان نسخہ ہے تو دیکھیں نیاز بو کے بیج اس نسخے کو بنانے کے لیے پہلے نمبر پر ہمارا مین اجزاء ہے نیاز بو کے بیج یہ آپ کو پنسار سٹور سے ملیں گے یہ اتنے سے لینے ہیں یہ پچاس روپے کے لے لینے ہیں تقریباً پنسار سٹور سے مل جا ئیں گے اس کو گرائینڈ کر کے اس کا پاؤڈر بنا نا ہے اس کا پاؤڈر بنانے کے بعد میں نے اس کا پاؤڈر بنانے کے بعد آپ کو چاہیے ہوگا ایک عدد پیاز چھوٹا سا پیاز لیں اور اس کو کدو کش کر یں اب اس کا ہم نے رس لینا ہے اب جو نیاز بو کے بیج کے ہم نے پاؤڈر بنا یا تھا ان پیاز کو لیں اس کا جتنا بھی رس ہے اس میں شامل کر دیں۔ اب اس میں شامل کر دیں ایک چٹکی سفید ہلدی کا ۔ اب ان تمام کو اچھی طرح سے مکس کر لیں۔ اچھے سے مکس کر نے کے بعد اس کو اپنے جسم کے کسی بھی حصے پر آپ بے فکر ہو کر لگا سکتے ہیں جہا ں جہاں آپ کے بال ہوں گے وہاں وہاں یہ ریمیڈی اپلائی کر سکتے ہیں اور بے فکر ہو کر یہ ریمیڈی استعمال کر سکتے ہیں اس ریمیڈی سےآ پ کو بہت ہی زیادہ فائدہ حاصل ہو نے والا ہے اس ریمیڈی کے استعمال سے آپ کے جو غیر ضروری بال ہیں جسم پر جسم کے کسی بھی حصے پر آیا کہ ٹانگوں پر ہیں بازوؤں پر ہیں ہاتھوں پر ہیں اور گردن پر ہیں چھاتی پرہیں پیٹ پر ہیں پاؤں پر ہیں حتیٰ کہ جسم کے کسی بھی حصہ پر ہیں یہ بال ان بالوں کو بہت ہی جلدی یہ جو ریمیڈی ہے ان بالوں کو بہت ہی جلدی صاف بھی کر دے گی اور ان بالوں سے جو ہونے واہی شر مندگی ہے اس شرمندگی کو بھی ختم کر دے گی۔ یہ بہت ہی خاص ریمیڈی ہے ان لڑ کیوں کے لیے اور ان لڑکوں کے لیے ان خواتین کے لیے اور ان مردوں کے لیے جو اپنے غیر ضروری بالوں کی وجہ سے بہت ہی زیادہ پریشان ہیں۔ ان کے لیے یہ ریمیڈی بہت ہی خاص ہے اس ریمیڈی کو آپ نےضرور استعمال کر نا ہے تا کہ اس سے بھر پور فائدہ حاصل ہو سکے

Sharing is caring

About the author

Admin

Leave a Comment